Poetry / Sad

Muzammil Shahzad

اُس نے موہوم سے کچھ عیب اُچھالے میرے
کر سکا پر نہ وہ کمزور حوالے میرے

کون ہوتا ہے جُدا اپنے کسی مُحسن سے
اب کہاں جائیں گے جو درد ہیں پالے میرے

عُمر بھر کی یہ کمائی ہیں اگرچہ میری
آئے اور آ کے کوئی خواب چُرا لے میرے

دیکھ! یہ نعمتیں اب دُشمنِ جاں ہیں تیری
میں نہ کہتا تھا کہ مت چِھین نوالے میرے

خواب تو جان سے پیارے ہیں مگر یہ ڈر ہے
پیٹ کی آگ کہیں خواب نہ کھا لے میرے

مجھ کو تسلیم! تجھے مجھ سے محبت ہے بہت
تجھ سے جائیں گے مگر روگ نہ پالے میرے

اِس لئے خود کو ہے اشعار میں ڈھالا ثاقب
کل مجھے ڈھونڈ سکیں، ڈھونڈنے والے میرے,

Advertisement
· 1 Like · May 17, 2016 at 09:05
Category: sad
 
Apni Marzi ki Zindagi
Posted by mehreen ali
Posted on : Apr 11, 2016

Random Post

Sponored Video

New Pages at Social Wall

New Profiles at Social Wall

Connect with us


Facebook

Twitter

Google +

RSS