Poetry / General

Muzammil Shahzad

Parinda

Wo Parinda Jo Pair Pe Tanha Betha Tha
Jane Kis Soch Mein Doba Kya Kuch Soch Raha Tha
Duniya Ki Soch Se Mawara
Logoun Ki Bheer Se Aalag Thalag
Tanhai K Shano Pe Sar Rakh Ker
Aur Raat Ki Tanhai Ko Apne Uper Urh Ker
Chand Ko Apna Dost Banaye Jane Kya Kuch Bata Raha Tha
Lafzon K Jal Mein Ulajh Ker Wo
Kabhi Kehta Kabhi Rukta Kabhi Hans Deta
Kabhi Monh Chupaye Chanda Se Dhere Dhere Ro Deta
Dekh K Us Ko Laga Youn Mujhe
Shayed . . .
Ye Bhi Ek Qaidi Ho Her Raat Ki Tanhai Ka.

· 1 Like · Feb 25, 2016 at 15:02
Category: general
 
Poetry / General

Muzammil Shahzad

کیا خبر تھی

کیا خبر تھی میں اس درجہ بدل جاوّں گا
تجھ کو کھو دوں گا تیرے غم سے سمبھل جاوں گا
اجنبی بن کے ملوں گا میں تجھے محفل میں
تونے چھیڑی بھی تو میں بات بدل جاوں گا
ڈھونڈ پائے نہ جہاں یاد بھی تیری مجھ کو
ایسے جنگل میں کسی روز نکل جاوں گا
ضد میں آئے ہوے معصوم سے بچے کی طرح
خود ہی کشتی کو ڈبونے پہ مچل جاوں گا

· 1 Like · Feb 25, 2016 at 03:02
Category: general
 
Poetry / General

Muzammil Shahzad

کھلی جو آنکھ

کھلی جو آنکھ تو وہ تھا نہ وہ زمانہ تھا
دہکتی آگ تھی تنہائی تھی فسانہ تھا
غموں نے بانٹ لیا مجھے یوں آپس میں
کہ جیسے میں کوئی لُوٹا ہوا خزانہ تھا
یہ کیا کہ چند ہی قدموں پہ تھک کے بیٹھ گئے
تمہیں تو ساتھ میرا دورتک نبھانا تھا
مجھے جو میرے لہو میں ڈّبو کے گذرا ہے
وہ کوئی غیر نہیں یار اک پرانا تھا
خود اپنے ہاتھ سے 'شہزاد' اُس کو کاٹ دیا
کہ جس درخت کی ٹہنی پہ آشیانہ تھا

· 1 Like · Feb 24, 2016 at 20:02
Category: general
 
Poetry / General

Muzammil Shahzad

زندگی کس ڈگر پہ چلتی ہے

زندگی کس ڈگر پہ چلتی ہے
نت نئے راستے بدلتی ہے

تشنگی بجھ رہی ہے کھیتوں کی
برف کہسار پر پگھلتی ہے

میرا چہرہ جھلس گیا کیسے!
آگ تو میرے دل میں جلتی ہے

دھیرے دھیرے اُبھر رہا ہے چاند
روشنی پاؤں پاؤں چلتی ہے

· 1 Like · Feb 24, 2016 at 14:02
Category: general
 
Poetry / General

Muzammil Shahzad

زندگی کس ڈگر پہ چلتی ہے

زندگی کس ڈگر پہ چلتی ہے
نت نئے راستے بدلتی ہے

تشنگی بجھ رہی ہے کھیتوں کی
برف کہسار پر پگھلتی ہے

میرا چہرہ جھلس گیا کیسے!
آگ تو میرے دل میں جلتی ہے

دھیرے دھیرے اُبھر رہا ہے چاند
روشنی پاؤں پاؤں چلتی ہے

· 1 Like · Feb 24, 2016 at 08:02
Category: general
 
Poetry / General

Muzammil Shahzad

نوجوان محنت کش کا نغمہ

دن بھر کی محنت سے تھک کر
شام کوجب گھر جاتا ہوں
افسردہ دہلیز کو اپنا رستہ
تکتا پاتا ہوں
اپنی تھکن کی میلی چادر
آنگن کی رسی پہ ڈال کے
پھر باہر آجاتا ہوں
رات گئے تک بازاروں میں
اپنا جی بہلاتا ہوں
چمپا کے ہاروں سے
اپنی دنیا کو مہکاتا ہوں
آوارہ کہلاتا ہوں

· 2 Like · Feb 24, 2016 at 02:02
Category: general
 
Poetry / General

Muzammil Shahzad

پرکھنا مت

پرکھنا مت پرکھنے میں کوئی اپنا نہیں رہتا
کسی بھی آئینے میں دیر تک چہرہ نہیں رہتا
ہزارون شعر میرے سو گئے کاغذ کی قبروں میں
عجب ماں ہوں کوئی بچہ میرا زندہ نہیں رہتا
بڑے لوگوں سے ملنے میں ہمیشہ فاصلہ رکھنا
جہاں دریا سمندر سے ملا دریا نہیں رہتا
تمہارا شہر تو بالکل نئے انداز والا ہے
ہمارے شہر میں بھی اب کوئی ہم سا نہیں رہتا
کوئی بادل نئے موسم کا پھر اعلان کرتا ہے
خزاں کے باغ میں جب ایک بھی پتا نہیں رہتا
محبت ایک خشبو ہے ہمیشہ ساتھ رہتی ہے
کوئی انسان تنہائی میں بھی تنہا نہیں رہتا

· 1 Like · Feb 23, 2016 at 07:02
Category: general
 
Poetry / General

Muzammil Shahzad

Hum Jo Kuch Hain

Hum Apnay Ap Pe Hi Zahir, Kabhi Dil Ka Haal Nahi Kartay,
Chup Rehtay Hain, Dukh Sehtay Hain, Koi Ranj-o-Malal Nahi Kartay,

Hum Jo Kuch Hain, Jaise Hain, Waise Hi Dikhayi Detay Hain,
Chehre Pe Bhabhoot Nahi Maltay, Kabhi Kalay Baal Nahi Kartay,

Hum Haar Gaye Tum Jeet Gaye, Hum Ne Khoya Tum Ne Paya,
In Jhooti Sachi Baaton Ka, Hum Koi Khayal Nahi Kartay,

Tere Deewanay Ho Jatay Hain, Kahin Sahraon Mein Kho Jatay Hain,
Deewar-o-Dar Mein Qaid Humein Agar Ahal-o-Ayaal Nahi Kartay,

Teri Marzi Par Hum Raazi Hain, Jo Tu Chahay Woh Hum Chahein,
Hum Hijr Ki Fiker Nahi Kartay, Hum Zikar-e-Wisaal Nahi Kartay,

Humein Tere Siwa Is Duniyan Mein, Kissi Aur Se Kya Lena Dena,
Hum Sab Ko Jawab Nahi Detay, Hum Se Sawal Nahi Kartay,

Ghazalon Mein Humari Bolta Hai, Wohi kaanon Mein Ras Gholta Hai,
Wahi Band Kivaarh Kholta Hai, Hum Koi Kamal Nahi Kartay.......!!!!!

· 1 Like · Feb 21, 2016 at 03:02
Category: general
 
Poetry / General

Muzammil Shahzad

Teri Wafa Sochtey Hain

Kia Pochtay Ho Tere Hijar Me Kia Sochtey Hain
Saja Ke Tum Ko Nighaon Me Sada Sochtey Hain

Tere Wajoud Ko Chho Kar Jo Guzri Hai Kabhi
Hum Us Hawa Ko Bhi Jannat Ki Hawa Sochtey Hain

Ye Apney Zarf Ki Had Hai K Faqat Tera Lehaaz
Tere Sitam Ko Muqaddar Ka Likha Sochtey Hain

Mera Is Shehar-E-Adawat Me Basera Hai Jahan
Log Sajdo Me Bhi Logo Ka Bura Sochtey Hain

Kis Qadar Hum Bhi Hain Nadaan Mohabbat Me
Tere Ikhlaas Ko Hum Teri Wafa Sochtey Hain

· 2 Like · Feb 16, 2016 at 23:02
Category: general
 
Poetry / General

Muzammil Shahzad

Siraat K Bina


Be-rabt se Tehreer Ibarat Nahi Hoti,
Hathon Ki Lakiron Mein Toh Qismat Nahi Hoti,

Sajday Mein dikhawa Ho Toh Sajda Nahi Hota,
Garden K Jhuknay se Ebadat Nahi Hoti,

Woh Shakhs Muhabbat se Hemesha Raha Mehroom,
Auron K Liye Jis Mein Muhabbat nahi Hoti,

Chehray Ka Singhar Kabhi Kaam Na Aya,
Siraat k Bina Koi Bhi Surat Nahi Hoti,

Shahkaar Ki Taqmeel Mein Shamil Na Ho Gar fiker,
Tasweer Toh Ban Jati Hai Muraat Nahi Hoti......!!!!

· 1 Like · Feb 16, 2016 at 11:02
Category: general
 
Masha Allah How Many Likes.
Posted by abid aqeel
Posted on : Jan 30, 2016

Random Post

New Pages at Social Wall

New Profiles at Social Wall

Connect with us


Facebook

Twitter

Google +

RSS