Dil Ki Batain Bata Deti Hain Aankhen
Poetry / Love

دل کی باتیں بتا دیتی ہیں آنکھیں
دھڑکنوں کو جگا دیتی ہیں آنکھیں

دل پہ چلتا نہیں جادو چھیڑوں کا کبھی
دل کو تو دیوانہ بنا دیتی ہیں آنکھیں

وہ ہم سے بات نہیں کرتے تو نا کرے
حال سارا ان کے دل کا سنا دیتی ہیں آنکھیں

غم صدا رہتا نہیں آدمی کہ ساتھ
اشک بنا کر چھلکا دیتی ہیں آنکھیں

آتا ہے جب دور جوانی تو اے دوستو
سندر سپنے ذہن میں بسا دیتی ہیں آنکھیں

منا کہ نیند آتی ہے آنکھوں ہی کہ رستے
مگر کبھی کبھار نیند اڑا دیتی ہیں آنکھیں

شکر ہے خدا نے اٹا کی
آنکھوں کی نعمت ہمیں

درد غم سارے دل کہ
چھپا دیتی ہیں آنکھیں . . . !
Dil Ki Batain Bata Deti Hain Aankhen
Dharkanon Ko Jaga Deti Hain Aankhen

Dil Pe Chalta Nahi Jadoo Cheroon Ka Kabhi
Dil Ko Tu Deewana Bana Deti Hain Aankhen

Woh Hum Se Baat Nahi Karte Tu Na Kare
Haal Sara Unke Dil Ka Suna Deti Hain Aankhen

Gham Sada Rehta Nahi Aadmi Ke Saath
Ashk Bana Kar Chalka Deti Hain Aankhen

Aata Hai Jab Doar-E-Jawani Tu Ae Dosto
Sunder Sapne Zehan Mein Basa Deti Hain Aankhen

MaNa Ke Neend Aati Hai Aankhon Hi Ke Raste
Magar Kabhi Kabhar Neend Ura Deti Hain Aankhe

Shukar Hai Khuda Ne Atta Ki
Aankhon Ki Naimat Humain

Dard-O-Gham Sare Dil Ke
Chupa Deti Hain Aankhen...!

Advertisement
· 1 Like · May 19, 2012 at 14:05
Category: love Tags: Khuda
 

Latest Posts in poetry

kamzor insaan kabhi muaf nahin karsakta.
Posted by safia saeed
Posted on : Apr 24, 2014

Random Post

New Pages at Social Wall

New Profiles at Social Wall

Connect with us


Facebook

Twitter

Google +

RSS